Jalebi

Keep up to date with the latest information
۵ پاکستانی بینک جو ہوم لون کی سہولت فراہم کررہے ہیں۔

۵ پاکستانی بینک جو ہوم لون کی سہولت فراہم کررہے ہیں۔

۱۔ اسٹینڈرڈ چارٹرڈ اسٹینڈرڈ چارٹرڈ کا صادق ہوم فنانسنگ ڈویژن ہوم لون کی سہولت فراہم کرتاہے۔ آپ قرض کی رقم کے لئے درخواست دے سکتے ہیں۔آپ۳۰لاکھ سے ۳۰ ملین روپے تک کاقرض حاصل کر سکتے ہیں  جوکہ ماہانہ ۱۲ سے۲۴۰ قسطوں  میں قابل ِاداہے۔ ۲۔ایچ بی ایل ایچ بی ایل ہوم لون کے ذریعہ آپ ۲ ملین سے ۱۵ ملین تک لون کی رقم کے لئے درخواست دے سکتے ہیں جوکہ۲۰ سے۲۴۰ ماہانہ قسطوں میں اداکرنی ہوگی۔ ۳۔بینک الحبیب بینک الحبیب ۳۰۰۰۰۰سے ۲۰ ملین روپے تک ہوم لون فراہم کررہا ہے جو ۲۴۰ماہانہ قسطوں میں قابل ِاداہے۔ ۴۔جے ایس بینک جے ایس بینک ۵۰۰۰۰۰سے ۱۰۰ ملین روپے تک کے ہوم لو ن فراہم کرتا ہے جو ماہانہ ۱۲ سے ۲۴۰ میں قابل ِاداہوتا ہے۔  ۵۔بینک الفلاح الفلاح ہوم فنانس آسان شرائط و ضوابط پر ہوم لون دے رہا ہے۔ آپ قرض کے لئے درخواست دے سکتے ہیں۔۲ ملین سے ۵۰ ملین تک کی رقم جس کی ادائیگی ۳۶ سے ۲۴۰ ماہانہ قسطوں میں ہوگی۔

Read More
اسلام آباد کا کلین گرین ماڈل سٹی کے طور پر قیام

اسلام آباد کا کلین گرین ماڈل سٹی کے طور پر قیام

اسلام آباد کا کلین گرین ماڈل سٹی کے طور پر قیام اسلام آباد کو کلین گرین ماڈل سٹی کے طور پر تیار کیا جارہا ہے ۔ اسلام آباد میں جائداد کی سرمایہ کاری کا یہ بہترین وقت ہے ۔ دارالحکومت اسلام آباد کاشمارپہلے ہی پاکستان کے صاف ستھرے شہروں میں ہوتاہے، جو اِسے رہائش کے لئے ایک بہترین مقام بنا تا ہے ۔ بدھ کے روز موسمیاتی تبدیلی سے متعلق وزیر اعظم کے مشیر نے کہا کہ اسلام آبادکو وزیر اعظم عمران خان کے نظریے کے تحت ایک کلین گرین ماڈل سٹی کے طور پر تیار کیا جارہا ہے ۔ ملک امین نے ایک اعلی سطحی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہا کہ گرین بیلٹس کے غلط استعمال کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی جبکہ اسلام آباد کے ماسٹر پلان کو مددِنظر رکھتے ہوئے تمام تجاوزات کو ختم کیا جائے گا ۔ وزارت کے ایک بیان کے مطابق، انہوں نے کہا کہ متعلقہ محکمے شہر کے گرین بیلٹس، تجاوزات اور ماسٹر پلانز کی تعداد کے بارے میں ڈیٹا فراہم کریں گے ۔

Read More
دنیا کی ۰۱ مشہور ترین عمارتیں

دنیا کی ۰۱ مشہور ترین عمارتیں

دنیا کی ۰۱ مشہور ترین عمارتیں جاننیٗے دنیا کی ۰۱ مشہور ترین عمارتیں کونسی ہیں یوں تودنیابھر میں بہت سی مشہور عمارتیں ہیں،یہ عمارتین مختلف وجوہات کی بناء پر مشہور ہیں کچھ اپنے فنِ تعمیر،کچھ اپنی تاریخی اہمیت اور کچھ دونوں وجوہات کے بناء پر شہرت کے حا مل ہیں۔دنیا کی چید مشہور عمارتوں کے نام اور تصاویر ذیل ہیں: ۱۔ ہگیا صوفیہ، استبول، ترکی ۲۔جوجینھیم، نیویارک سٹی، امریکہ  ۳۔ تاج محل، آگرہ،  ہندستا ن ۴۔ ڈانسنگ ہاوٗس، پراگ، چیک ریپبلک ۵۔ اہرامِ مصر، گیزا، مصر ۶۔ جارجز پومپیڈ وسینٹر، پیرس، فرانس ۷۔گیٹ وے آرچ، سینٹ لو ئس، میسوری، امریکہ ۸۔ اورسے میوزیم، پیرس، فرانس ۹۔ویسٹ منسٹر ایبے، لندن، یوکے ۰۱۔ دی کولیزیم، روم، اٹلی

Read More
محفوظ سرمایہ کاری

محفوظ سرمایہ کاری

محفوظ سرمایہ کاری،  دگنا منافع ہم سب اس بات کو تسلیم کرتے ہیں کہ رئیل اسٹیٹ مارکیٹ میں سرمایہ کاری کے بے شمار فوائد ہیں اوریہ بات بھی سچ ہے کہ رئیل اسٹیٹ مارکیٹ میں سرمایہ کاری کر کے ہم مستحکم آمدنی حاصل کر سکتے ہیں۔ مستحکم آمدنی اکثر لوگ رئیل اسٹیٹ مارکیٹ میں صرف اس لیے سرمایہ کاری کرتے ہیں کیونکہ یہ کرایہ کی مدمیں آنے والی آمدنی کامستحکم اور آسان ذریعہ ہے۔ طویل مالی تحفظ رئیل اسٹیٹ مارکیٹ میں سرمایہ کاری طویل مالی تحفظ فراہم کرتی ہے جس کے نتیجے میں سرمایہ کار کو اس سرمایہ کاری کے ثمرات لمبے عرصے تک مالی ا نعامات کی صورت میں حاصل ہوتے ہیں کیونکہ زمین کی قیمتوں میں مسلسل اضافہ ہوتا ہے۔ مہنگائی  رئیل اسٹیٹ مارکیٹ میں سرمایہ کاری کا ایک اہم فائدہ یہ بھی ہے کہ یہ مہنگائی بڑنے کی صورت میں بھی فائدہ دیتی ہے کیونکہ مہنگائی بڑتے ہی زمین کی قیمت اورکرائے میں اضافہ ہو جاتا ہے۔ رئیل اسٹیٹ مارکیٹ میں سرمایہ کاری کرنے سے آپ خود اپنے کاروبار کے مالک بن جاتے ہیں اوربے شمار کاروباری فائدے حاصل کرکے بے انتہا دولت حاصل کر سکتے ہیں۔   آپ خود فیصلہ کریں!

Read More
بلاول ہاؤس  ایک تحلقہ خیز انکشاف

بلاول ہاؤس ایک تحلقہ خیز انکشاف

تصور کریں کہ آ پ ایک گھر کے مالک  ہیں اور پھر اس کی نقل تیار کرنے کا انتظام ہوجائے۔  پاگلپن لگ رہا ہے؟  تو پیشِ خد مت  ہیں پاکستان کے سابق صدرآصف علی زرداری۔ بلاول ہاؤس کو کون نہیں پہچانتا؟  بلاول ہاؤس پاکستان میں ایک مشہور عمارت،  ایک خاص سنگ میل اور ورثہ کی قدر رکھتا ہے۔  جناب  آصف علی زرداری کی خوش قسمتی یہ تھی کہ وہ بحریہ ٹاؤن کے بانی، ملک ریاض سے بطور تحفہ، بحریہ ٹاؤن کے اندر بلاول ہاؤس حاصل کرنے میں کامیاب ہوگئے۔ یہ سچی دوستی کی ایک بہترین مثال ہے۔ کراچی میں بلاول ہاؤس تقریبا  ۰۔۲  ایکڑ پرواقع ہے۔ ہم صرف یہ تصور ہی کرسکتے ہیں کہ اس کے اندر کیا ہے۔ اب ذرا اندازہ لگائیں اور تقریبا   ۲۵ ایکڑ رقبے پر آپ اس عمارت کی ایک نقل بنائیں۔ یہ بحریہ ٹاؤن میں واقع بلاول ہاؤس کا اندازن رقبہ ہے۔ ایک دن صرف اتنی بڑی جگہ کو صاف کرنے کا تصور کریں۔ بحریہ ٹاؤن لاہور میں واقع بلاول ہاؤس کسی بھی چیز کا مقابلہ کرسکتا ہے۔ یہ بم پروف ہے، اس میں 30 انچ موٹی دیواریں حفاظتی طورپر بنی ہوئی ہیں، اس میں تیسرے درجے کا حفاظتی نظام موجود ہے۔ اس کے علاوہ اس میں چھوٹے جیٹ طیاروں اور ہیلی کاپٹروں کے لئے لینڈنگ کی جگہ بھی ہے۔ یہ ایک بلٹ پروف بنگلہ ہے۔ اس میں لگ بھگ۰ ۱۰۰۰ افراد رہ سکتے ہیں۔ ذرا تصور کریں، ایک مشترکہ پارلیمانی اجلاس اور اس کے ساتھ ہی سپریم کورٹ کی کارروائی بھی، ایک ہی چھت کے نیچے ہوسکتی ہے۔ ا ب ان اعداد و شمار کو ذہن میں رکھتے ہوئے سوچیں کہ بلاول ہاؤس لاہور کی قیمت کیا ہوگی۔ ۵ ارب،جی ہاں اس محل کی قیمت۵ ارب روپے ہے۔ یہ بلاول ہاؤس کراچی کی قیمت سے لاتعداد گناہ زیادہ ہے، جوکہ صرف ۳۰ لاکھ ہے۔  بحریہ ٹاؤن ایک محفوظ سرمایہ کاری ہے۔ یہ آپ کو سستی قیمت پرپُرتعیش طرز زندگی مہیا کرتا ہے۔ یہ پُرکشش مقامات اور جدید فنِ تعمیر کاایک شاکار ہے،  جیسے کہ بحریہ ٹاؤن لاہور میں بلاول ہاؤس۔ پراپرٹی کے بارے میں مزید اپ ڈیٹس جاننے کے لئے جڑے رہیں۔

Read More
پاکستان میں سب سے اونچی عمارتیں

پاکستان میں سب سے اونچی عمارتیں

پاکستان میں سب سے اونچی عمارتیں پاکستان  ایشیاء کے ترقی پزیر ممالک میں سے ایک ہے اوررئیل اسٹیٹ انڈسٹری پاکستان میں بے انتہا ترقی کے سفر طے کر رہی ہے۔جدید پلازہ اور بلندعمارات فنِ تعمیرکے اہم ترین شاکار ہیں۔ذیل پاکستان کی۵ بلند ترین عمارات ہیں: ۱۔بحریہ  آئکن ٹاور بحریہ  آئکن ٹاور پاکستان کی سب سے بڑی عمارت ہے جس میں ۷۰ منزلین ہیں۔بحریہ ٹاون آئکن کی اونچائی۳۲۰میٹر ہے۔یہ خوبصورت عمارت کراچی میں واقع ہے جس میں بہت سے شاپنگ مال اور رہائشی اپارٹمینٹ موجود ہیں۔ ۲۔بخت  ٹاور یہ خوبصورت  ٹاور کراچی میں واقع ہے۔اس کی بلندی ۱۴۵ میٹر ہے جس میں ۲۷ منزلینہیں۔یہ ٹاور ۲۰۱۵ میں مکمل ہواہے۔ ۳۔اؤشین ٹاور  اس فلک بوس عمارت کو تعمیر کرنے میں ۷سال کا عرصہ لگاجوکہ۲۰۱۴ میں مکمل ہوئی۔اس میں ۳۰ منزلین ہیں اوریہ عمارت۱۲۰ میٹر بلندہے۔ ۴۔ایم سی بی  ٹاور یہ شاندار عمارت کراچی میں واقع ہے جس میں ۲۹ منزلین ہیں۔ اس عمارت کو ۲۰۰۵ میں تعمیر کیا گیا۔ ۵۔ یوفون ٹاور یوفون ٹاوراسلام آباد میں مو جود ہے اور یہ ۲۴ منزلوں پر مشتمل ہے۔اس کی تعمیر ۲۰۰۵ میں شروع کی گئی اور ۲۰۱۱ میں مکمل کیا گیا۔

Read More

Join our newsletter today!